05 دسمبر 2021
تازہ ترین
عدالتیں آزاد، کسی ادارے کی بات سنی نہ دبائو میں آیا، چیف جسٹس

عدالتیں آزاد، کسی ادارے کی بات سنی نہ دبائو میں آیا، چیف جسٹس

لاہورٜ چیف جسٹس پاکستان گلزار احمد نے کہا ہے کہ کسی ادارے کی بات سنی نہ کسی کے دبائو میں آیا، کسی نے کبھی میرے کام میں مداخلت نہیں کی، کوئی مجھے گائیڈ نہیں کرتا کہ اپنا فیصلہ کیسے کروں؟، یہی کردار باقی سارے ججوں کا ہے۔ چیف جسٹس نے لاہور میں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ لوگوں کو غلط فہمی کا شکار نہیں ہونا چاہئے، میں اپنے ضمیر کے مطابق فیصلہ کرتا ہوں، ایسا تاثر دینا غلط ہے کہ عدالتیں آزاد نہیں، آئین و قانون کے مطابق فیصلے کئے، کبھی کسی کی ڈکٹیشن نہیں لی، میں نے کسی ادارے کا دبا¶ نہیں لیا، عدلیہ اپنے فیصلے کرنے کیلئے آزاد ہے۔ چیف جسٹس  کا کہنا تھا کہ بتائیں کس کی ڈکٹیشن پر کون سا فیصلہ ہوا؟، لوگوں کا عدلیہ سے بھروسہ نہ اٹھائیں، انتشار مت پھیلائیں، ضمیر کے مطابق فیصلے کرتا ہوں، جج انصاف کی سربلندی کے لئے محنت سے کام کر رہے ہیں۔


مزید خبریں

عوامی سروے

سوال: کیا آپ کووڈ 19 کے حوالے سے حکومتی اقدامات سے مطمئن ہیں؟